Breaking News
Home / Uncategorized / Dhoka Mujhe Diye Pe Hua Aaftaab Ka دھوکہ مُجھے دِیے پہ ہُوا آفتاب کا

Dhoka Mujhe Diye Pe Hua Aaftaab Ka دھوکہ مُجھے دِیے پہ ہُوا آفتاب کا

دھوکہ مُجھے دِیے پہ ہُوا آفتاب کا
ذِکرِشراب میں بھی نشا ہے شراب کا

جی چاہتا ہے بس اُسے پڑھتے ہی جائیں ہم
چہرا ہے یا ورق ہے خُدا کی کِتاب کا

سُورج مُکھی کے پُھول سے شاید پتا چلے
منہ جانے کِس نے چُوم لِیا آفتاب کا

مٹّی تُجھے سلام کے تیرے ہی فیض سے
آنگن میں لہلہاتا ہے پودا گُلاب کا

آُٹھو اے چاند تاروں اے شب کے سِپاہیوں
آواز دے رہا ہے لہُو آفتاب کا

Dhoka Mujhe Diye Pe Hua Aaftaab Ka
Zikr-E-Sharaab Me Bhi Nasha Hai Sharaab Ka

Jee Chaahta Hai Bas Ussay Padhtay Hi Jaain Hum
Chehra Hai Ya Waraq Hai Khuda Ki Kitaab Ka

Sooraj-Mukhi Ke Phool Se Shaayad Pata Chale
Moonh Jaane Kis Ne Choom Liya Aaftaab Ka

Mitti Tujhe Salaam Ke Tere Hi Faiz Se
Aangan Main Lehlahata Hai Pauda Gulaab Ka

Utho Ae Chaand-Taaron Ae Shab Ke Sipaahiyon
Aawaz De Raha Hai Lahoo Aaftaab Ka

About Rahat Indori

Rahat Indori

Check Also

Jo Mera Dost Bhi Hai, Mera Humnawa Bhi Haiجو میرا دوست بھی ہے میرا ہم نوا بھی ہے

جو میرا دوست بھی ہے میرا ہم نوا بھی ہے وہ شخص صرف بھلا ہی …